Barish Poetry in Urdu by Ahmad Faraz 2 Line – Urdu Shayari

Barish poetry in Urduby Ahmad Faraz 2 Line

Ae Barish Waha Baras Jaha Trste Hain Tuj Ko Loog

Mere Tou Dil Ka Angan Ansuoo Sy Sairab Rahta Hai

-::-

اے بارش وہاں برس جہاں ترستے ہیں تجھ کو لوگ

میرے تو دِل کا آنگن آنسوؤں سے سیراب رہتا ہے

————–

Tum Jo hote Tou Baat Aur Thi

Hye Murshid! Abb Ki Barish Tou Sirf Pani Hai

-::-

تم جو ہوتے تو بات اور تھی

ہائے مرشد ! اب کی بارش تو صرف پانی ہے

——————

Fraq e Yaar Ki Barish Malal Ka Mosam

Murshid!Hamare Shehr Main Utra Kmal Ka Mosm

-::-

فراق یار کی بارش ملال کا موسم

مرشد ! ہمارے شہر میں اترا کمال کا موسم

————–

Phle Barish Hoti Thi Tou Yaad Ate Thay

Abb Jb Yaad Ate Ho Tou Barish Hoti Hai

-::-

پہلے بارش ہوتی تھی تو یاد آتے تھے

اب جب یاد آتے ہو تو بارش ہوتی ہے

————————-

Murshid!Kya Roog Dy Gai Yh Ny Mosm Ki Barish

Hye Murshid!Muje Yaad A Rhe hain Muje bhol Jane Wale

-::-

مرشد ! کیا روگ دے گئی یہ نے موسم کی بارش

ہائے مرشد ! مجھے یاد آ رہے ہیں مجھے بھول جانے والے

——————

Murshid!Tumhe Barish Psand Hai

Hye Murshid!Muje Barish Main Tum

-::-

مرشد ! تمہیں بارش پسند ہے

ہائے مرشد ! مجھے بارش میں تم

——————

Kh Kahan Pori Hoti Hain Dil Ki sbhi Khwahisain

Murshid!Barish Bhi Ho Yaar Bhi Ho Aur Phir Paas Bhi Ho

-::-

کہ کہاں پوری ہوتی ہیں دِل کی سبھی خواہشین

مرشد ! بارش بھی ہو یار بھی ہو اور پِھر پاس بھی ہو

—————-

Kh Pata Hai Muje Barish Kiun Pasnd Hai

Murshid!Yh Brsti Hai Udas Loogon Ky Liye

-::-

کہ پتہ ہے مجھے بارش کیوں پسند ہے

مرشد ! یہ برستی ہے اُداس لوگوں کے لیے

——————

Kh Suna Hai Barish main Hr duwa Qbol Hoti Hai

Murshid!Agr Ijazt Ho Tou Duwa main Tumhain Maang Loun

-::-

کہ سنا ہے بارش میں ہر دعا قبول ہوتی ہے

مرشد ! اگر اجازت ہو تو دعا میں تمہیں مانگ لوں

—————–

Kh Barish Sy Zyada Asr Hota Hai Yadon Main

Murshid!Aksr band Kmro Main Loog zaida bhig Jaty Hain

-::-

کہ بارش سے زیادہ اثر ہوتا ہے یادوں میں

مرشد ! اکثر بند کمروں میں لوگ ذیادہ بھیگ جاتے ہیں

——————-

Murshid!Yun Tou Hr Sham Umeedo peh Guzr Jati Hai

Murshid!Koi Tou Baat Hai Jo Aaj Umeedo Peh Rona Aya

-::-

مرشد ! یوں تو ہر شام امیدوں پہ گزر جاتی ہے

مرشد ! کوئی تو بات ہے جو آج امیدوں پہ رونا آیا

——————

Janta Ho Muhabbat Kisay Khtay Hain Kisi Ko Dil Sy Chahna

Phir Haar Jana Aur Phir Khamosh Rhna

-::-

جانتا ہو محبت کسے کہتے ہیں کسی کو دِل سے چاہنا

پِھر ہار جانا اور پِھر خاموش رہنا

———————

Aik Din Khud Ko Diwar Peh Kya Likh Liya

Murshid!Barishein Honay Lag Gai Muj Ko Mitanay kh Liye

-::-

ایک دن خود کو دیوار پہ کیا لکھ لیا

مرشد ! بارشیں ہونے لگ گئی مجھ کو مٹانے کہ لیے

——————

Mudat Hui Kh App Ny Daikha Nhi Muj Ko

Murshid!Mudat Kh Baad App Sy Daikha Na Jae Ga

-::-

مدت ہوئی کہ آپ نے دیکھا نہیں مجھ کو

مرشد ! مدت کہ بعد آپ سے دیکھا نا جائے گا

———————

Barish Ki Bondon Main Jhlkti hai Tumhari Tasveer

Aaj Phir Bheeg Baithay hain Tumhain Pane Ki Chahat Main

-::-

بارش کی بوندوں میں جھلکتی ہے تمہاری تصویر

آج پِھر بھیگ بیٹھے ہیں تمہیں پانے کی چاہت میں

—————————-

Zra Tehro Barish Hai Yh Tham Jaay Tou Chalay Jana

Kisi Ka Tuj Ko Chu jana muje Acha Nhi Lgta

-::-

زرا ٹھہرو بارش ہے یہ تھم جائے تو چلے جانا

کسی کا تجھ کو چھو جانا مجھے اچھا نہیں لگتا

———————

Suna Hai Boht Barish Hoi Hai Tumhare Shehr Main Zyada Bhig Na Mt

Agr Dhuul Gai Sari Glat Fhmiya Tou Boht Yaad Aain Gy Hum

-::-

سنا ہے بہت بارش ہوئی ہے تمھارے شہر میں زیادہ بھیگ نا مت

اگر دھول گئی ساری غلط فحمیا تو بہت یاد آئیں گے ہم

——————

Nhi Ho Skti Muhabbat Tere Siwa Kisi Aur Sy

Bs Itni Si Baat Hy Aur Tum Smjti Hi Nhi

-::-

نہیں ہو سکتی محبت تیرے سوا کسی اور سے

بس اتنی سی بات ہے اور تم سمجھتی ہی نہیں

——————–

Barish Ki Bondo Main Na Janay Kis Kis Ky Ansou Hain

Sadiyo Pahly koi shayd Sadio Baith Ky roya Hai

-::-

بارش کی بوندو میں نا جانے کس کس کے آنسوں ہیں

صدیوں پہلے کوئی شاید صدیوں بیٹھ کے رویا ہے

——————-

Ae Barish Zara Tham Ky Baras Jb Wo Aye Tou Jm Ky Baras

Phlay Nah Baras Ky Woh Aana Skay Phir Itna Baras Ky Woh Ja Na Skay

-::-

اے بارش ذرا تھم کے برس جب وہ آئے تو جم کے برس

پہلے نہ برس کے وہ آنا سکے پِھر اتنا برس کے وہ جا نا سکے

———————–

Gm Ki Barish NY Bhi Tere Naksh Ko dhoya Nhi

Tou Ny Muj Ko Kho Diya main Ny Tuje Khoya Nhi

-::-

غم کی بارش نے بھی تیرے نقش کو دھویا نہیں

تو نے مجھ کو کھو دیا میں نے تجھے کھویا نہیں

——————

Barish Ki Trha Tuj Py Brsti Rahain Khoshiya

Hr Bund Tere Dil Sy Hr Gm Mita Dy

-::-

بارش کی طرح تجھ پائے برستی رہیں خوشیا

ہر بوند تیرے دِل سے ہر غم مٹا دے

——————

Iss Kdar Pyar Ki Barish Ho Kh Jl Thal Ho Jao Main

Tum Ghata Bn Kh Chaly Ao Baadal Bn Jao Main

-::-

اِس قدر پیار کی بارش ہو کہ جل تھل ہو جاؤ میں

تم گھٹا بن کہ چلے آؤ بادل بن جاؤ میں

—————

Ajeeb Kashish Hai Barish Kh Mosam mai Bhi

Nah Chahtay Howe Bhi Koi Boht Yaad Aata hai

-::-

عجیب کشش ہے بارش کہ موسم میں بھی

نہ چاہتے ہوئے بھی کوئی بہت یاد آتا ہے

——————–

Hoti Hain Muhabbat Main Kuch Raaz Ki Batain

Aisay Hi Tou Iss Khail Main Hara Nhi Jata

-::-

ہوتی ہیں محبت میں کچھ راز کی باتیں

ایسے ہی تو اِس کھیل میں ہارا نہیں جاتا

——————

Aray Wah Yh Hassen Mosam ,Yh Baris,Yh Hwa Aain

Lgta Hai Muhabbat Ny Aaj Kisi Ka Saath Diya Hai

-::-

ارے واہ یہ حسین موسم ، یہ بارش ، یہ ہوائیں

لگتا ہے محبت نے آج کسی کا ساتھ دیا ہے

——————–

Taiz barish Main Khari Ho Wo Aik Jumla Sunnay Ko

Aray Idhar Ao, Bhig Jao Gi

-::-

تیز بارش میں کھڑی ہو وہ ایک جملہ سننے کو

ارے ادھر آؤ ، بھیگ جاؤ گی

—————–

Aaj Barish Bhi Tere Drd Ki Trha Hai

Hlki Hlki Pr Hoti Ja Rhi Hai

-::-

آج بارش بھی تیرے درد کی طرح ہے

ہلکی ہلکی پر ہوتی جا رہی ہے

—————-

Lot Ai Hai daikho Barish Yaha Waha

Ik Tum Ko Hi Lot Anay Ki Frstt Nhi

-::-

لوٹ آئی ہے دیکھو بارش یہاں وہاں

اک تم کو ہی لوٹ آنے کی فرست نہیں

——————–

Yh Rim Jim , Yh Barish ,Yh Awargi Ka Mosam

Hmare Bs Mai Ho Tou Tumhare Paas Chalay Atay

-::-

یہ رم جم ، یہ بارش ، یہ آوارَگی کا موسم

ہماری بس میں ہو تو تمھارے پاس چلے آتے

————————

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *