Beautiful Romantic Poetry in Urdu – Urdu Shayari

Beautiful Romantic Poetry in Urdu

Kya Khaak Maza Aye Ga Jb Yr Na Ho Phlo Main

Murshid!Aag Lage Is Mosm Ko Koi Naam Na Lay Barish Ka

-::-

کیا خاک مزہ آئے گا جب یار نا ہو پھلو میں

مرشد ! آگ لگے اِس موسم کو کوئی نام نا لے بارش کا

——————

Murshid!asstKhara Kya hai aaj Main Ny Us Ky Naam Ka

Murshid!Woh Wafa Daar zroor Hai Mgr Kisi Aur Ky Naam Ka

-::-

مرشد ! استخارا کیا ہے آج میں نے اس کے نام کا

مرشد ! وہ وفا دار ضرور ہے مگر کسی اور کے نام کا

——————–

Muje Thfe Boht Psnd Hain

Murshid!Abb Jb Aao Tou Waqt Lay Aana

-::-

مجھے تحفے بہت پسند ہیں

مرشد ! اب جب آؤ تو وقت لے آنا

———————

Mohabbat main ujray Loog

Murshid!Yqeen Kijiye Kam Soote Aur Zyada Rooty Hain

-::-

محبت میں اجڑے لوگ

مرشد ! یقین کیجیے کم سوتے اور زیادہ روتے ہیں

———————

chhor Jane Ka Dkh Itna Nhi

Murshid!Koi Aisa Tha Jis Sy Yh Umeed Na Thi

-::-

چھوڑ جانے کا دیکھ اتنا نہیں

مرشد ! کوئی ایسا تھا جس سے یہ امید نا تھی

——————

Kitni Hirt ki Baat Hai Murshid

Bari Jawani Main Aik Lrka Udaas Rhta Hai

-::-

کتنی حیرت کی بات ہے مرشد

بڑی جوانی میں ایک لڑکا اداس رہتا ہے

———————-

Brdasht Nhi Hota Kh Kisi Aur Ka Bhi Taluq Ho Tumse

Barish Ki Boond Bhi Tumhai Chho le Tou Aag Lag Jati Hai

-::-

برداشت نہیں ہوتا کہ کسی اور کا بھی تعلق ہو تم سے

بارش کی بوند بھی تمہیں چھو لے تو آگ لگ جاتی ہے

———————

Kh Gunahgar Ho Gunahgaro Sy Hai Wasta Mera

Prhiz Garo Sy Aksr Prhiz Rhta Hai Mera

-::-

کہ گنہگار ہو گنہگاروں سے ہے واسطہ میرا


پرہیز گارو سے اکثر پرہیز رہتا ہے میرا

——————-

Preshan Dil Ko Aur Preshan Na Kr

Ishq Krna Hai Tou Ishq Kr Ahsan Na Kr

-::-

پریشان دِل کو اور پریشان نا کر

عشق کرنا ہے تو عشق کر احسان نا کر

——————-

Bara Maan Hai Usay Gairo Pr

Hosla Rakh Usay Yaad Aao Ga

-::-

بڑا مان ہے اسے غیروں پر

حوصلہ رکھ اسے یاد آؤ گا

———————-

Dil Main Rah Kr Dil Dkhate Ho Murshid!

Apna Mukaam Daikho Aur Apny Kaam Daikho

-::-

دِل میں راہ کر دِل دکھاتے ہو مرشد !

اپنا مقام دیکھو اور اپنے کام دیکھو

—————–

Ab Meri Koi Zindagi Hi Nhi

Kya Ab Bhi Tum Meri Zidagi Ho

-::-

اب میری کوئی زندگی ہی نہیں

کیا اب بھی تم میری زدگی ہو

—————–

Rotha Hai Tum Sy Tou Cenay Sy Kiun Nhi Lga Lety

Diwana Hai Tumhara Koi Gair Thori Hai

-::-

روٹھا ہے تم سے تو سینے سے کیوں نہیں لگا لیتے

دیوانہ ہے تمہارا کوئی غیر تھوڑی ہے

——————-

Kis Liye Mohsin Kisi Bay Meher Ko apna Kaho

Main Dil Ky Sheshey Ko Pthr Sy Kiun tkrao

-::-

کس لیے محسن کسی بے مہر کو اپنا کہو

میں دِل کے شیشے کو پتھر سے کیوں ٹکراؤ

—————–

Hum Ny Tumhare Bgair Jena

Murshid!Phli Koshish Main Hi Ma rey Gay

-::-

ہم نے تمھارے بغیر جینا

مرشد ! پھلی کوشش میں ہی مارے گے

—————–

Na Hmarey Paas Dolt Na Dil Nasheen Surt

Murshid!Hmarey Jaise Loog Muhabbat Bhi Nhi Kr Skty

-::-

نا ہمارے پاس دولت نا دِل نشین صورت 

مرشد ! ہمارے جیسے لوگ محبت بھی نہیں کر سکتے

——————

Kh Sirf Hatho Ko Na Daikho Ankhein Bhi Prho

Murshid!Kuch Swali Boht Khudar Hote Hain

-::-

کہ صرف ہاتھوں کو نا دیکھو آنکھیں بھی پرہو

مرشد ! کچھ سوالی بہت خودار ہوتے ہیں

——————-

Kh Chal Chup Kr Hr Waqt Usi Ki Sffaiein Usi Ki Gwahi ein

Murshid!Tou Mera Dil Hai Yh Uska Wakeel

-::-

کہ چل چُپ کر ہر وقت اسی کی صفایں اسی کی گواہیں

مرشد ! تو میرا دِل ہے یہ اسکا وکیل

————-

Kon Krta Hai Yaha Pyar Nbha Ny Kh Liye

Murshid!Dil Tou Aaik Khilona Hai Zmany Kh Liye

-::-

کون کرتا ہے یہاں پیار نبھا نے کہ لیے

مرشد ! دِل تو ایک کھلونا ہے زما نے کہ لیے

————————

Kh Ishq Ny Daikho Kaisi Tbahi Mcha Rakhi Hai

Murshid!Adhi Dunya Pagl Adhi Shayr Bana Rakhi Hai

-::-

کہ عشق نے دیکھو کیسی تباھی مچا رکھی ہے

مرشد ! آدھی دنیا پاگل آدھی شاعر بنا رکھی ہے

——————-

Kh Phle Lgta Tha Tum Hi Dunya Ho

Murshid!Ab Lgta Hai tum Bhi Dunya Ho

-::-

کہ پہلے لگتا تھا تم ہی دنیا ہو

مرشد ! اب لگتا ہے تم بھی دنیا ہو

—————–

Muhabbat Kr Kh Kisi Ko Chour Dyna

Murshid!Yakin kro Uska Katl Krny Kh Brabr Hota Hai

-::-

محبت کر کہ کسی کو چھوڑ دینا

مرشد ! یقین کرو اسکا قتل کرنے کہ برابر ہوتا ہے

——————

Tere Okaat Sy Uncha Hai Ishq Mera

Murshid!Tu Muje Apne Laik Na Smja Kr

-::-

تیرے اوقات سے اونچا ہے عشق میرا

مرشد ! تو مجھے اپنے لائق نا سمجا کر

——————

Murshid!Aik Waqt Tha Hum Jaan Thay Jin Ki

Murshid!Aik waqt Hai Wo Anjan Hain Hum Sy

-::-

مرشد ! ایک وقت تھا ہم جان تھے جن کی

مرشد ! ایک وقت ہے وہ انجان ہیں ہم سے

——————

Is Dunya Ka Main Kya Kro Mola

Is Ny Muj Sy Meri Dunya Bhi Ch ein in Li

-::-

اِس دنیا کا میں کیا کرو مولا

اِس نے مجھ سے میری دنیا بھی چھین لی

———————-

Main Dhaare Maar Kh Roya Jb Muje Kisi Ki Yaad Ai

Murshid!Jb Khi Kise Sy Pocha Prha Khuda Hafiz

-::-

میں دھارے مار کہ رویا جب مجھے کسی کی یاد آئی

مرشد ! جب کہی کسی سے پوچھا پڑا خدا حافظ

————–

Dou Chehro Ka Bojh Na Otha Ya Kijey

Murshid!Dil Na Milain Tou Haath Bhi Na Milaya Kijey

-::-

دو چہروں کا بوجھ نا اٹھا یا کیجئیے

مرشد ! دِل نا ملیں تو ہاتھ بھی نا ملایا کیجئیے

——————-

Jin Ki Qismt Main Likha Ho Rona Mohsin

Wo Muskura Bhi Dein Tou Rona Nikl Hi A tta Hai

-::-

جن کی قسمت میں لکھا ہو رونا محسن

وہ مسکرا بھی دیں تو رونا نکل ہی آ تا ہے

—————-

Tere Khne Pay Tuje Choura Hai Tumhain

Murshid!Zmane Sy Na Khna Bay Wafa Ho Main

-::-

تیرے کھنے پے تجھے چھوڑا ہے تمہیں

مرشد ! زمانے سے نا کہنا بے وفا ہو میں

——————-

Tnhai Ki Raat Main Ny Cigreet Jala Dali

Murshid!Kmbht Dhwan Ny Uski Tasveer Bana Dali

-::-

تنہائی کی رات میں نے سگریت جلا ڈالی

مرشد ! کمبحت دھواں نے اسکی تصویر بنا ڈالی

——————-

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *