Sad Urdu Shayari for girlfriend – Urdu Shayari

Sad Urdu Shayari for Girlfriend

Waqt Badl Daita Hai Zindagi Kh Sabhi Raang

Koi Chah Kh Apnay Liye Udaasi Nhi Chonta

-::-

وقت بدل دیتا ہے زندگی کہ سبھی رنگ

کوئی چاہ کہ اپنے لیے اداسی نہیں چونتا

——————-

Kya Batao Tum Mera Yaar Kaisa Hai

Wo Chaand Sa Nhi Chaand Usky Jaisa Hai

-::-

کیا بتاؤ تم میرا یار کیسا ہے

وہ چاند سا نہیں چاند اُس کے جیسا ہے

——————

Is Kh Lafzoon Ki Kramat Batao Tum Ko

Dil Pah Lagte Thay Tou Ankhon Sy Nikl Aty Thay

-::-

اِس کہ لفظوں کی کرامات بتاؤ تم کو

دِل پاہ لگتے تھے تو آنکھوں سے نکل آتے تھے

——————-

Ja Bchr Ja Mgr Khyal Rahe

Yh Nah Ho Umer Bher Malaal Rahe

-::-

جا بچحر جا مگر خیال رہے

یہ نہ ہو عمر بھر ملال رہے

——————-

Likhny Ko Tou Likh Dou Haal e Zindagi

Lakin Har Dard Ka Matam Nhi Hota

-::-

لکھنے کو تو لکھ دو حال زندگی

لیکن ہر درد کا ماتم نہیں ہوتا

————————

Hum ny Ahtiyar Kya Diya

Tum Tou Lay Dobe Humein

-::-

ہم نے احتیار کیا دیا

تم تو لے ڈول بے ہمیں

——————-

Dil Sy Nikaal Dijiye Ahsas e Arzoo

Mar Jaiye Par Kisi Ki Tamana Na Kijiye

-::-

دِل سے نکال دیجیئے احساس آرزو

مر جائیے پر کسی کی تمنا نا کیجیے

——————

Apna Samaj Kh Jis Kh Liye Ujar Gaya

Kal Raat Ja Raha Kisi Ajnabi Kh Saath

-::-

اپنا سمجھ کہ جس کہ لیے اجڑ گیا

کل رات جا رہا کسی اجنبی کہ ساتھ

——————

Kuch Aur Bhi Hain Kaam Humein Ay Gam e Janan

Kb Tak Koi Ulji Hoi Zulfo Ko Swa ay

-::-

کچھ اور بھی ہیں کام ہمیں اے غم جاناں

کب تک کوئی الجھی ہوئی زلفوں کو سوارے

——————

Aur Waqt Ny Muje Jazb Krna Sikha Diya

Halaat, Kaifiyat, Wakiyat,Jazbat

-::-

اور وقت نے مجھے جذب کرنا سکھا دیا

حالات ، کیفیات ، واقعات ، جذبات

——————–

Siyah Raat ,Udaas Dil

Ulji Hoi Zindagi,Thakay Howe Hum

-::-

سیاہ رات ، اداس دِل

الجھی ہوئی زندگی ، تھکے ہوئے ہم

——————-

Nadan Hun, Na Samaj Hun, Baikar Hi Samjo

Dil Roota Hai,Hoont Hanstay Hain,Fankar Hi Samjo

-::-

نادان ہوں ، نا سمجھ ہوں ، بیکار ہی سمجھو

دِل روتا ہے ، ہونٹ ہنستے ہیں ، فنکار ہی سمجھو

——————-

Koi Dhuwa Utha Na Roshni Hoi

Jalti Rahi Hayat Bari Khamoshi Kh Sath

-::-

کوئی دھواں اٹھا نا روشنی ہوئی

جلتی رہی حیات بڑی خاموشی کہ ساتھ

—————

Mar Rahe Hain Hum Jine Ki Aas Main

Kho Rahe Hain Khood Ko Kisi Ko Pane Ki Aas Main

-::-

مر رہے ہیں ہم جینے کی آس میں

کھو رہے ہیں خود کو کسی کو پانے کی آس میں

——————–

Dil Pah Guzry Har Sanhe Kh Sath

Jiye Ja Rahe Hain Muskura aye Ja Rahe Hain

-::-

دِل پاہ گزرے ہر سانحے کہ ساتھ

جئے جا رہے ہیں مسکرائے جا رہے ہیں

———————

Phir Sy Teri Yaadein meri Chokhat Pah Khari Hain

Wahi Sardi Wahi Barish Wahi Dilkash January Hai

-::-

پِھر سے تیری یادیں میری چوکھٹ پہ کھڑی ہیں

وہی سردی وہی بارش وہی دلکش جنوری ہے

—————–

A Thak Kh Mere Pass Kabhi Baith Tou Humdam

Tou Khud Ko Musafir Muje Diwar Samaj Le

-::-

آ تھک کہ میرے پاس کبھی بیٹھ تو ہمدم

تو خود کو مسافر مجھے دیوار سمجھ لے

———————

Na Kaha Karo Kh Hum Chour Dy Gy Tum Ko

Murshid!Na Hum Itne Aam Hain Na Tumhare Bs Ki Baat Hai

-::-

نا کہا کرو کہ ہم چھوڑ دے گے تم کو

مرشد ! نا ہم اتنے عام ہیں نا تمھارے بس کی بات ہے

————–

Aur Apni Yado Sy Kaho Aik Din Ki Choti Dy Humein

Murshid!Ishq K Hisa Main Bhi Tou Itwar Hona Chahiye

-::-

اور اپنی یادو سے کہو ایک دن کی چھٹی دے ہمیں

مرشد ! عشق کے حصہ میں بھی تو اتوار ہونا چاہیے

——————–

Agr Ho Ijazt Tou Aik Sawal Pouch Lo Murshid!

Wo Jo Ishq Hum Sy Sikha Ta Aj Kl Kis Sy Kr Rhe Ho

-::-

اگر ہو اجازت تو ایک سوال پوچھ لو مرشد !

وہ جو عشق ہم سے سکھا تا آج کل کس سے کر رہے ہو

——————

Teri Jdai Aur Yh July

Hye Murshid!Dono Mil k Jala Rhe Hain

-::-

تیری جدائی اور یہ جولائی

ہائے مرشد ! دونوں مل کے جلا رہے ہیں

—————–

Kbhi Parh Tou sahi Meri Ankho Ko

Murshid!Yaha Drya Bahta Hai Teri Muhabbat Ka

-::-

کبھی پڑھ تو سہی میری آنکھوں کو

مرشد ! یہاں دریا بہتا ہے تیری محبت کا

—————–

Suno Tum Meri Jaan Ho

Murshid!Muje Bay Jaan Na Krna

-::-

سنو تم میری جان ہو

مرشد ! مجھے بے جان نا کرنا

——————-

Baat Krny K Liye Trpa Rahe Ho Trpao pr Yaad Rakhna

Murshid!Aik Din Meri Awaz Sun ny K liye Trpo Gy

-::-

بات کرنے کے لیے ترپا رہے ہو ترپاو پر یاد رکھنا

مرشد ! ایک دن میری آواز سن نے کے لیے ترپو گے

————————

Kya Khabr Thi Humein Is Sy Muhabbat Ho Jaye Gi

Murshid!Humein Tou Bs Iska Muskurana Acha Laga Tha

-::-

کیا خبر تھی ہمیں اِس سے محبت ہو جائے گی

مرشد ! ہمیں تو بس اس کا مسکرانا اچھا لگا تھا

——————-

Tumhein Tou Dil Main Rkha Tha

Murshid!Zra Sa Dil Hi Rakh Lety

-::-

تمہیں تو دِل میں رکھا تھا

مرشد ! زرا سا دِل ہی رکھ لیتے

——————-

Kh Ishq Main Shrk

Aur Muhabbat Main BayWafai Ki Mafi Nhi Hoti

-::-

کہ عشق میں شرک

اور محبت میں بےوفائی کی معافی نہیں ہوتی

—————–

Zdi Hai Par Akhir Thak Jai Gi

Murshid!Aik Lrki Dukh Sahte Sahte Mar Jai Gi

-::-

ضدی ہے پر آخر تھک جائے گی

مرشد ! ایک لڑکی دکھ سہتے سہتے مر جائے گی

————–

Kbhi Tera Mujko Chour Jana

Namumkin Sa Laga Krta Tha

-::-

کبھی تیرا مجھ کو چھوڑ جانا

ناممکن سا لگا کرتا تھا

————–

Lrna Chahti Ho Main Apno Sy

Murshid!Lakin Agar Jeet Gai Tou Sab Haar Jao Gi

-::-

لرنا چاہتی ہو میں اپنوں سے

مرشد ! لیکن اگر جیت گئی تو سب ہار جاؤ گی

—————

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *